Wednesday, 10 August 2022
  1.  Home/
  2. Blog/
  3. Sana Shabir/
  4. Politics And Education

Politics And Education

پولیٹکس اینڈ ایجوکیشن پروگرام طلباء کو مقامی، ریاستی اور قومی سطحوں پر تعلیمی پالیسی کے رہنما کے طور پر کیریئر کے لیے تیار کرتا ہے، یا تعلیمی پالیسی، سیاسیات، یا عوامی پالیسی میں ڈاکٹریٹ کے پروگراموں میں اعلیٰ درجے کے کام کو آگے بڑھانے کے لیے تیار کرتا ہے۔ اس پروگرام کے فارغ التحصیل سرکاری ایجنسیوں، فاؤنڈیشنز اور مختلف نجی ایجنسیوں کے لیے پالیسی مشیر اور محقق کے طور پر پوزیشنیں حاصل کرتے ہیں جو تعلیم کے شعبے کے لیے پالیسیوں کو دیکھنے اور تیار کرنے کے لیے پرعزم ہیں۔

اسکول شہریوں اور کارکنوں کی آنے والی نسلوں کی نشوونما کے ساتھ ساتھ بہت سی کمیونٹیز میں ملازمتوں اور سرمایہ کاری کا ایک اہم ذریعہ بنانے کے لیے ایک طاقتور آلہ کی نمائندگی کرتے ہیں۔ کورس ورک اس بات پر توجہ مرکوز کرتا ہے کہ معاشرے کس طرح متضاد نظریات کو سنبھالتے ہیں کہ اسکولوں کو کیا کرنا چاہئے اور کیا نہیں کرنا چاہئے، اور سیاسی اور گورننس کے عمل میں کون سی مخصوص تبدیلیاں بہتر فیصلہ سازی اور پالیسی کے نفاذ میں سہولت فراہم کر سکتی ہیں۔

یہ کوئی راز نہیں ہے کہ انسانی تاریخ نے ایسی بہت سی مثالیں دیکھی ہیں جن میں سیاسی نظریات نے ریاستی سطح پر فیصلہ سازی میں تعلیمی پالیسی میں مداخلت کی۔ اس سے نہ صرف سرکاری سکول متاثر ہو رہے ہیں بلکہ پرائیویٹ سکول بھی۔ یہ مداخلت ہمیشہ مثبت یا منفی نہیں ہوتی۔ اس طرح کے آسان زمروں میں تشکیل پانا بہت پیچیدہ ہے۔

کچھ لوگوں کا خیال ہے کہ تعلیمی اداروں خصوصاً سکولوں کے نظام کو سیاست سے ہر ممکن حد تک دور رہنا چاہیے کیونکہ پالیسی سازوں کو اکثر گندے، لالچی اور ہر ممکن طریقے سے اپنے عزائم کی تکمیل کے لیے تیار خیال کیا جاتا ہے۔ اس حقیقت کے باوجود کہ یہ تصویر حقیقت میں درست ہو سکتی ہے، کم از کم جزوی طور پر، یہ سوچنا تھوڑا سا سادہ لوح ہے کہ سیاسی اثر و رسوخ کبھی بھی عوامی تعلیم پر نہیں جائے گا۔

آئین کی 10ویں ترمیم کے ساتھ، قانون سازوں نے حکم دیا کہ اسکولی اضلاع کو مقامی ریاستی حکومت کے ذریعے برقرار رکھا جانا چاہیے۔ امریکہ، محکمہ تعلیم ہر اسکول ضلع کا انتظام کرتا ہے اور تدریسی حکمت عملی اور مواد کی سفارش کرتا ہے، جسے مقامی حکام نظر انداز کر سکتے ہیں۔ لہٰذا، اصل کنٹرول ریاستی حکومت کے پاس ہے۔ صرف اس کا مالیاتی مختص، نصاب، تدریس، اور درس گاہ میں کوئی حتمی لفظ ہو سکتا ہے۔ تاہم، وفاقی حکومت ان سکولوں کو اضافی فنڈز دے کر تعلیم کو متاثر کر سکتی ہے جو مخصوص معیار پر پورا اترتے ہیں اور رہنما اصولوں پر عمل کرتے ہیں۔

Check Also

Paise Bachane Ka Asan Tareen Tariqa

By Zafar Bashir Warraich